bilalahmed.netPoetries

الفاظ ختم ہو جاتے ہیں

الفاظ ختم ہو جاتے ہیں


آوازیں بند ہو جاتی ہیں. لوگ اتنا دور چلے جاتے ہیں

کہ واپس آنا نا ممکن ہوتا ہے

پیچھے رہ جاتی ہیں تو صرف یادیں

کچھ سچی، کچھ جھوٹی سی

کچھ پوری، کچھ ادھوری سی

الفاظ ختم ہو جاتے ہیں

BILAL AHMED OFFICIAL
Show More

Related Articles

Check Also

Close
Close